بدھ, اگست 17, 2022
spot_img

تعلیمی اداروں کی بندش سے متعلق این سی او سی کا اہم اجلاس کل طلب

اسلام آباد: ملک میں کورونا وائرس کی وبا کی پانچویں لہر کے پھیلاؤ پر قابو پانے کی کوشش میں نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) نے صوبائی وزرائے تعلیم اور صحت کا اجلاس کل 17 جنوری کو طلب کرلیا۔

اجلاس میں صوبائی وزرائے تعلیم اور صوبائی وزرائے صحت کے وزراء کا اجلاس تعلیم کے شعبے، عوامی اجتماعات، شادی بیاہ کی تقریبات، انڈور/آؤٹ ڈور ڈائننگ اور ٹرانسپورٹ سیکٹر پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے نان فارماسیوٹیکل مداخلت (NPIs) کا ایک نیا مجموعہ تجویز کرے گا۔

ملک میں کورونا وبا کے بڑھتے ہوئے تناسب کے پیش نظر تعلیمی ادروں کے حوالے سے اہم فیصلوں کا امکان ہے۔ این سی او سی نے بڑھتی ہوئی بیماری سے نمٹنے کے لیے ضروری اقدامات کے لیے صوبوں خصوصاً سندھ حکومت کے ساتھ بڑے پیمانے پر رابطے کا فیصلہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ این سی او سی نے 17 جنوری سے پرواز میں کھانے، ناشتے کی فراہمی پر مکمل پابندی کے نفاذ کا فیصلہ بھی کر رکھا ہے۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی سے کہا گیا کہ وہ دوران پرواز ماسک پہننے کو یقینی بنائے اور تمام ہوائی اڈوں پر ایس او پیز کو بھی نافذ کرے۔

17 جنوری سے پبلک ٹرانسپورٹ میں کھانے اور اسنیکس کی فراہمی پر بھی پابندی ہوگی۔ این سی او سی نے تمام حلقوں کو ہدایت کی کہ وہ جاری ویکسی نیشن مہم کو تیز کریں اور ویکسی نیشن کے اہداف کو حاصل کرنے کے لیے کوششیں تیز کریں۔

اومیکرون کے کیسز میں اضافہ ہورہا ہے، این سی او سی

دریں اثنا این سی او سی نے کہا ہے کہ کورونا کی پانچویں لہر میں اومیکرون کے کیسز میں اضافہ ہورہا ہے، کم وقت میں اومیکرون کے کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں تاہم ہسپتالوں میں داخلہ اور شرح اموات نہیں بڑھ رہیں جب کہ کورونا کیسز میں تشویش ناک حالت کے کیسز میں معمولی اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

Stay Connected

22,878FansLike
3,437FollowersFollow
0SubscribersSubscribe
- Advertisement -spot_img

Latest Articles